ویکسین کی بوسٹر خوراکیں

مواد میں آخری مرتبہ 27 جون 2022 کو ترمیم کی گئی

(بیماریوں کے کنٹرول اور روک تھام کا مرکز، CDC) Center for Disease Control and Prevention اور (مغربی ریاستوں کے سائنسی حفاظتی جائزہ کا ورک گروپ، Western States Scientific Safety Review Workgroup) کی تازہ ترین بوسٹر خوراک کی تجاویز درج ذیل ہیں:

  • 5 تا 11 سال کی عمر کے بچوں کو  ابتدائی ویکسین سیریز مکمل کرنے کے پانچ ماہ کے بعد بوسٹر خوراک ملنی چاہیے۔ کمزور قوت مدافعت رکھنے والے بچوں کو ان کی ابتدائی سیریز کے کم از کم تین ماہ بعد ان کی بوسٹر خوراک ملنی چاہیے
  • 12 سال اور اس سے زائد عمر کے ہر شخص کو Pfizer یا Moderna کی اپنی بنیادی ویکسین سیریز مکمل کرنے کے پانچ ماہ بعد، یا سنگل شاٹ Johnson & Johnson (J&J) ویکسین حاصل کرنے کے دو ماہ بعد بوسٹر خوراک ملنی چاہیے۔
  • 50 سال اور اس سے زائد عمر کے ہر فرد کو پہلی بوسٹر خوراک حاصل کرنے کے چار ماہ بعد دوسری بوسٹر خوراک ملنی چاہیے۔
  • معتدل یا شدید کمزور قوت مدافعت رکھنے والے 12 سال یا اس سے زائد عمر کے لوگوں کو اپنی پہلی بوسٹر خوراک حاصل کرنے کے چار ماہ بعد دوسری بوسٹر خوراک ملنی چاہیے۔
  • 18 سال اور اس سے زائد عمر کے وہ لوگ جنہوں نے چار ماہ پہلے J&J ویکسین کی ابتدائی ویکسین اور بوسٹر خوراک حاصل کی تھی وہ mRNA کووڈ-19 ویکسین کی دوسری بوسٹر خوراک حاصل کر سکتے ہیں۔
اگر آپ نے لگوائی… کس کو بوسٹر لگوانی چاہیے بوسٹر کب لگوائی جائے کون سی بوسٹر لگوائی جائے کیا میں دوسری بوسٹر خوراک لگوا سکتا ہوں؟
Pfizer-BioNTech 5 سال اور زائد عمر کے افراد پرائمری سیریز کی تکمیل کے کم از کم 5 ماہ بعد

Pfizer یا Moderna کو ترجیح دی جاتی ہے٭

17 سالہ اور کم عمر افراد صرف Pfizer ویکسین لگوا سکتے ہیں

اب 50 سال سے زائد عمر کے افراد اور چند کمزور مدافعتی نظام کے حامل افراد اپنی آخری بوسٹر خوراک کے 4 یا زائد ماہ بعد mRNA کووڈ-19 ویکسین کی اضافی بوسٹر خوراک لگوا سکتے ہیں۔
Moderna 18 سال اور زائد عمر کے افراد پرائمری سیریز کی تکمیل کے کم از کم 5 ماہ بعد Pfizer یا Moderna کو ترجیح دی جاتی ہے٭ اب 50 سال سے زائد عمر کے افراد اور چند کمزور مدافعتی نظام کے حامل افراد اپنی آخری بوسٹر خوراک کے 4 یا زائد ماہ بعد mRNA کووڈ-19 ویکسین کی اضافی بوسٹر خوراک لگوا سکتے ہیں۔
Johnson & Johnson 18 سال اور زائد عمر کے افراد پرائمری سیریز کی تکمیل کے کم از کم 2 ماہ بعد Pfizer یا Moderna کو ترجیح دی جاتی ہے٭

اب 50 سال سے زائد عمر کے افراد اور چند کمزور مدافعتی نظام کے حامل افراد اپنی آخری بوسٹر خوراک کے 4 یا زائد ماہ بعد mRNA کووڈ-19 ویکسین کی اضافی بوسٹر خوراک لگوا سکتے ہیں۔

کم از کم 4 ماہ قبل Johnson & Johnson’s Janssen کووڈ-19 ویکسین کی پرائمری ویکسین اور بوسٹر خوراک لگوانے والے بالغ افراد اب mRNA کووڈ-19 ویکسین استعمال کرتے ہوئے دوسری بوسٹر خوراک لگوا سکتے ہیں۔

٭ mRNAویکسینز کو ترجیح دی جاتی ہے، لیکن اگر آپ کوئی اور ویکسین نہ لگوا سکیں یا نہ لگوانا چاہیں تو Johnson & Johnson کووڈ-19 ویکسین ابھی تک دستیاب ہے۔

کمزور قوت مدافعت رکھنے والے لوگوں کے لیے خوراکیں

اگر آپ معتدل یا شدید کمزور قوت مدافعت کا شکار ہیں، تو ہدایات مختلف ہوں گی۔

اگر آپ کو لگ گئی ہے…

کیا مجھے اضافی خوراک لگوانی چاہیے؟

کیا میں بوسٹر خوراک لگوا سکتا/سکتی ہوں؟

کل خوراکیں

Pfizer: 5 سال یا اس سے زائد عمر کے بچوں کو دو خوراکیں ملنی چاہیے جن کے درمیان21 دنوں کاوقفہ ہونا چاہیے۔

ہاں، معتدل یا شدید کمزور قوت مدافعت کے شکار 5+ سال کی عمر کے افراد کو ان کے دوسرے شاٹ کے 28 دن بعد اضافی خوراک ملنی چاہیے۔

ہاں، آخری خوراک کے 3 ماہ بعد Pfizer mRNA بوسٹر خوراک کی تجویز دی جاتی ہے تاکہ 5 تا 11 سال کی عمر کے افرادکی خوراکیں اپ ٹو ڈیٹ ہوں۔

5 تا 11 سال کی عمر کے بچوں کے لیے mRNA کی دوسری بوسٹر خوراک تجویز نہیں کی جاتی ہے۔

4

ہاں، آخری خوراک کے 3 ماہ بعد mRNA بوسٹر کی تجویز دی جاتی ہے تاکہ 12 سال یا اس سے زائد عمر کے لوگوں کی خوراکیں اپ ٹو ڈیٹ ہوں۔

دوسری mRNA بوسٹر خوراک 12 سال اور اس سے زائد عمر والوں کے لیے پہلی بوسٹر خوراک کے 4 ماہ بعد ملنی چاہیے۔

17 سال اور اس سے کم عمر کے لوگ صرف Pfizer ویکسین لگوا سکتے ہیں۔

5

Pfizer: 6 ماہ تا 4 سالہ بچوں کو تین خوراکیں لگائی گئیں۔ پہلی دو خوراکوں کے درمیان 21 دن کا فاصلہ ہوتا ہے اور تیسری خوراک دوسری خوراک کے 8 ہفتے بعد دی جاتی ہے۔ جی نہیں، 6 ماہ تا 4 سالہ وہ بچے جن کا مدافعتی نظام معتدل یا شدید حد تک کمزور ہے، انہیں فی الحال اضافی پرائمری خوراک نہیں لگوانی چاہیے جی نہیں، فی الحال 6 ماہ تا 4 سالہ بچوں کے لئے mRNA بوسٹر کی تجویز نہیں دی جا رہی۔ 3

Moderna: 6 ماہ سال یا اس سے زائد عمر کے لوگوں کو دو خوراکیں ملنی چاہیے جن کے درمیان 28 دنوں کی وقفہ ہونا چاہیے

ہاں، معتدل یا شدید کمزور قوت مدافعت کے شکار 6 ماہ + سال کی عمر کے لوگوں کو ان کے دوسرے شاٹ کے 28 دن کے بعد دوسری خوراک ملنی چاہیے۔

جی نہیں، پرائمری سیریز میں Moderna لگوانے والے 6 ماہ تا 17 سالہ بچوں کے لئے فی الحال mRNA بوسٹر کی اجازت نہیں دی جا رہی۔

3

ہاں، آخری خوراک کے 3 ماہ کے بعد اپ ٹو ڈیٹ رہنے کے لیے، ایک mRNA بوسٹر لینے کی تجویز دی جاتی ہے،۔

دوسری mRNA بوسٹر خوراک 18 سال اور اس سے زائد عمر والوں کے لیے پہلی بوسٹر خوراک کے 4 ماہ بعد ملنی چاہیے۔

5

Johnson & Johnson ایک خوراک، 18 اور اس سے زائد عمر کے لوگوں کے لیے مجاز ہے

ہاں، معتدل یا شدید کمزور قوت مدافعت کے شکار 18+ سال کی عمر کے لوگوں کو J&J کی پہلی خوراک کے 28 دن کے بعد mRNA کی اضافی خوراک ملنی چاہیے۔

ہاں، 18 سال یا اس سے زائد عمر کے لوگوں کو آخری خوراک کے کم از کم 2 ماہ بعد mRNA بوسٹر کی تجویز دی جاتی ہے تاکہ خوراکیں اپ ٹو ڈیٹ رہیں۔

اگر آپ کو J&J کی بنیادی اور بوسٹر خوراک موصول ہوئی ہے، تو mRNA ویکسین کی دوسری بوسٹر خوراک پہلی بوسٹر خوراک کے 4 ماہ بعد ملنی چاہیے۔

4

عمومی سوالنامہ

کیا مجھے بوسٹر خوراک کے لئے اسی برانڈ کی ویکسین لگوانی چاہیے؟

آپ اپنی پرائمری سیریز سے مختلف ویکسین کی بوسٹر خوراک لگوا سکتے ہیں۔ تازہ ترین ڈیٹا (Moderna, Johnson & Johnson، بوسٹرز کے ملاپ) کے محتاط تجزیے اور بوسٹر ٹیکوں کے متعلق جامع اور واضح گفتگو کے بعد CDC نے یہ فیصلہ کیا ہے۔

17 سالہ اور کم عمر افراد بوسٹر خوراک کے لئے صرف Pfizer ویکسین لگوا سکتے ہیں

بوسٹر خوراکیں کیوں اہم ہیں؟

بوسٹر خوراکیں شدید کووڈ-19 کے زیادہ خطرے میں مبتلا افراد کو شدید بیماری سے جاری تحفظ فراہم کرتی ہیں۔  پہلے صرف شدید کووڈ-

پہلے صرف کووڈ-19 کے شدید خطرے والی آبادیوں کے لیے بوسٹر خوراکوں کی تجویز دی جاتی تھی، لیکن اس تجویز میں 5 سال یا اس سے زائد عمر کے ہر فرد کو شامل کرنے کے لیے توسیع کی گئی تاکہ کووڈ-19 کی بیماری کے خلاف تحفظ کو بڑھانے میں مدد مل سکے۔

ریاست ہائے متحدہ میں اجازت دی گئی یا منظور کی گئی کووڈ-19 ویکسینز کووڈ-19 اور متغیر اشکال کے خلاف بھی شدید بیماری، ہسپتال میں داخلے اور موت کا خطرہ گھٹانے میں ابھی تک مؤثر ہیں۔ پھر بھی وقت کے ساتھ ساتھ ویکسینز کی فراہم کردہ تحفظ میں کمی ہو سکتی ہے۔ بوسٹر خوراکوں کے ذریعے کووڈ-19 کے خلاف ویکسین سے ملنے والا تحفظ بڑھے گا اور طویل مدت تک مدافعت برقرار رکھنے میں مدد ملے گی۔

کیا آپ ابھی بھی لوگوں کو پرائمری سیریز کی ویکسین دے رہے ہیں؟

جی ہاں۔ تمام افراد کو پرائمری سیریز (Johnson & Johnson کی کووڈ ویکسین کی 1 خوراک یا Pfizer یا Moderna کی 2 خوراکیں) فراہم کرنا ابھی بھی اولین ترجیح ہے۔ ویکسین یافتہ بالغ افراد کی نسبت غیر ویکسین یافتہ بالغ افراد میں ہسپتال داخلے کی شرح 10 تا 22 گنا زیادہ ہے۔ غیر ویکسین یافتہ افراد کی نسبت ویکسین یافتہ افراد میں کووڈ-19 سے شدید بیمار ہونے (یا ذرا بھی بیمار ہونے) کا امکان نہایت کم ہوتا ہے ۔ ویکسینیشن نے افراد کو بیماری اور طویل مدتی علامات پیدا ہونے سے بچاؤ میں مدد ملتی ہے، جن کی کووڈ-19 میں مبتلا ہونے والے 50 فیصد تک افراد نے اطلاع دی تھی۔

اگر ہمیں بوسٹر ٹیکوں کی ضرورت ہے تو کیا اس کا مطلب یہ ہے کہ ویکسینز کام نہیں کر رہیں؟

جی نہیں، اس وقت امریکہ میں موجود کووڈ-19 ویکسینز متغیر اشکال کے باعث بھی شدید بیماری، ہسپتال میں داخلے، اور موت سے بچاؤ میں کارآمد ہیں۔ تاہم خاص کر زیادہ خطرے میں مبتلا آبادیوں میں صحت عامہ کے ماہرین ہلکے اور معتدل کووڈ-19 مرض کے خلاف تحفظ میں کمی دیکھ رہے ہیں۔

اگر میں بوسٹر خوراک نہ لگواؤں تو کیا میں پھر بھی مکمل ویکسین یافتہ ہوں؟
  • ایک شخص کو مکمل ویکسین یافتہ تصور کیا جاتا ہے جب اسے کووڈ-19 ویکسینیشن کی پرائمری سیریز کی تمام مجوزہ خوراکیں لگوائے ہوئے دو ہفتے گزر چکے ہوں۔
  • ایک انسان کی تمام کووڈ-19 ویکسینز تب مکمل ہوتی ہیں جب وہ پرائمری سیریز کی تمام مجوزہ خوراکیں اور اہل ہونے پر تمام بوسٹر لگوا لے۔
میں کیسے ظاہر کروں کہ میں بوسٹر ٹیکے کے لئے اہل ہوں؟

آپ خود اطلاع دے سکتے ہیں کہ آپ بوسٹر خوراک کے لئے اہل ہیں۔ آپ کو کسی طبی معالج کی سفارش دکھانے کی ضرورت نہیں۔

براہ کرم اپنی بوسٹر خوراک کی اپائنٹمنٹ پر اپنا ویکسینیشن کارڈ لے کر آئیں تاکہ معالج تصدیق کر سکے کہ آپ نے دو خوراکوں والی Pfizer ویکسین سیریز لگوائی ہے۔ اگر آپ کے پاس کارڈ نہیں ہے تو معالج انٹرنیٹ پر آپ کا ریکارڈ دیکھ سکتا ہے۔

ویکسین کی اضافی خوراک اور ویکسین کی بوسٹر خوراک میں کیا فرق ہے؟
  • اضافی خوراک ان مریضوں کے لئے ہے جنہوں نے 2 خوراکوں والی mRNA ویکسین سیریز (Pfizer یا Moderna) مکمل کی لیکن ان کا مدافعتی ردعمل مناسب حد تک مضبوط نہیں تھا۔
  • بوسٹر خوراک ان مریضوں کے لئے ہے جن میں ویکسین کی ابتدائی سیریز کے بعد وقت کے ساتھ ساتھ مامونیت کم ہونے کا امکان ہے۔

فی الحال درج ذیل گروہوں کے لئے کووڈ-19 ویکسین کی بوسٹر خوراک کی تجویز کی جاتی ہے۔

  کسے ملے گی کب ملے گی

اضافی خوراک

کمزور مدافعتی نظام کے حامل جن افراد نے دو خوراکوں والی mRNA کووڈ-19 ویکسین لگوائی تھی، انہیں اضافی پرائمری خوراک لگوانی چاہیے۔

mRNA کووڈ-19 ویکسین کی دوسری خوراک یا Johnson & Johnson ویکسین کی پہلی خوراک کے کم از کم 28 دن بعد۔ ضروری ہے کہ J&J کے بعد دی جانے والی اضافی خوراک mRNA ویکسین ہو۔
بوسٹر خوراک 18 سال اور زائد عمر کے وہ افراد جنہوں نے اپنی پرائمری سیریز میں Johnson & Johnson کووڈ-19 ویکسین لگوائی تھی۔ پہلی خوراک کے کم از کم دو ماہ بعد

معتدل تا شدید حد تک کمزور مدافعتی نظام کے حامل مریضوں کی اضافی (2nd) خوراک کے کم از کم 2 ماہ بعد۔

5 سال اور زائد عمر کے وہ افراد جنہوں نے اپنی پرائمری سیریز میں Pfizer-BioNTech کووڈ-19 ویکسین لگوائی تھی۔

mRNA ویکسین کی دوسری خوراک کے بعد کم از کم پانچ ماہ۔

معتدل تا شدید حد تک کمزور مدافعتی نظام کے حامل مریضوں کی اضافی (3rd) خوراک کے کم از کم 3 ماہ بعد۔

18 سال اور زائد عمر کے وہ افراد جنہوں نے اپنی پرائمری سیریز میں Moderna کووڈ-19 ویکسین لگوائی تھی۔

mRNA ویکسین کی دوسری خوراک کے بعد کم از کم پانچ ماہ۔

معتدل تا شدید حد تک کمزور مدافعتی نظام کے حامل مریضوں کی اضافی (3rd) خوراک کے کم از کم 3 ماہ بعد۔

اب 50 سال سے زائد عمر کے افراد اور چند کمزور مدافعتی نظام کے حامل افراد اپنی آخری بوسٹر خوراک کے 4 یا زائد ماہ بعد mRNA کووڈ-19 ویکسین کی اضافی بوسٹر خوراک لگوا سکتے ہیں۔ Federal Food and Drug Administration (FDA، وفاقی انتظامیہ برائے خوراک و منشیات) کی ضابطہ کاری کاروائی (صرف انگریزی) کے بعد Western States Scientific Safety Review Workgroup (مغربی ریاستوں کا سائنسی تجزیے کا گروہ) نے Centers for Disease Control and Prevention (مراکز برائے امراض پر قابو اور انسداد) کی اضافی بوسٹر خوراکوں کی تازہ تجاویز (صرف انگریزی) سے ہم آہنگی قائم کرنے کی کوشش کی ہے۔

مدافعتی نظام کمزور ہونے سے کیا مراد ہے؟

کمزور مدافعتی نظام کے حامل جن افراد نے دو خوراکوں والی mRNA کووڈ-19 ویکسین لگوائی تھی، انہیں اضافی پرائمری خوراک لگوانی چاہیے۔

اگر آپ کو درج ذیل میں سے کوئی طبی کیفیت لاحق ہے تو آپ کو معتدل تا شدید حد تک کمزور مدافعتی نظام کا حامل سمجھا جائے گا اور کووڈ-19 ویکسین کی اضافی خوراک آپ کے لئے فائدہ مند ثابت ہو سکتی ہے۔ اس میں ایسے افراد شامل ہیں جو:

  • رسولیوں یا خون کے کینسر کے باعث کینسر کا فعال علاج کروا رہے ہیں
  • کسی عضو کا ٹرانسپلانٹ کروا چکے ہیں اور مدافعتی نظام کو بٹھانے کے لئے دوا لے رہے ہیں
  • پچھلے 2 سالوں میں اسٹیم سیل کا ٹرانسپلانٹ کروا چکے ہیں یا مدافعتی نظام کو بٹھانے کے لئے دوا لے رہے ہیں
  • معتدل تا شدید مدافعتی کمزوری کے حامل ہیں (جیسا کہ DiGeorge سنڈروم، Wiskott-Aldrich سنڈروم)
  • ایڈوانسڈ یا غیر علاج یافتہ HIV انفیکشن میں مبتلا ہیں
  • کارٹیسٹرائڈز یا مدافعتی ردعمل گھٹانے والی دیگر ادویات کی بڑی خوراک والا فعال علاج کروا رہے ہیں۔

اگرچہ ہمارے پاس موجود ویکسینز وائرس کی اکثر اشکال کے خلاف 90 فیصد مؤثر ہیں، تحقیقات سے ظاہر ہوا ہے کہ معتدل تا شدید حد تک کمزور مدافعتی نظام کے حامل افراد کو ہمیشہ مضبوط مامونیت حاصل نہیں ہوتی۔ تیسری خوراک کو بوسٹر نہیں سمجھا جاتا بلکہ دو خوراکوں سے سیریز میں مناسب مقدار میں مدافعت نہ پیدا کرنے والوں کے لئے اضافی خوراک سمجھا جاتا ہے۔

دائمی طبی کیفیات سے کیا مراد ہے؟

درج ذیل کیفیات میں مبتلا کسی بھی عمر کے افراد (صرف انگریزی) کے کووڈ-19 سے شدید بیمار ہونے کا امکان زیادہ ہوتا ہے۔ شدید بیماری کا مطلب یہ ہے کہ کووڈ-19 میں مبتلا شخص:

  • ہسپتال میں داخل ہو سکتا ہے
  • اسے انتہائی نگہداشت کی ضرورت ہو سکتی ہے
  • سانس لینے میں مدد کے لئے وینٹیلیٹر کی ضرورت ہو سکتی ہے
  • موت واقع ہو سکتی ہے

کووڈ-19 ویکسینز (ابتدائی اور بوسٹر خوراکیں) اور کووڈ-19 سے بچاؤ کے دیگر اقدامات اہم ہیں، خاص کر اس صورت میں اگر آپ کی عمر زیادہ ہے یا اس فہرست میں شامل کئی یا شدید طبی کیفیات میں مبتلا ہیں۔ اس فہرست میں ایسی تمام ممکنہ کیفیات شامل نہیں جو آپ کو کووڈ-19 سے شدید بیمار ہونے کے بڑے خطرے سے دوچار کرتی ہیں۔ اگر آپ کو کوئی ایسی کیفیت لاحق ہے جو یہاں درج نہیں تو اپنے طبی معالج سے بات کر کے جانیں کہ آپ کی کیفیت کو بہترین طریقے سے کیسے مینج کیا جا سکتا ہے اور خود کو کووڈ-19 سے کیسے بچایا جا سکتا ہے۔

  • کینسر
  • گردوں کا دائمی مرض
  • جگر کا دائمی مرض
  • پھیپھڑوں کا دائمی مرض
  • ڈیمنشیا یا دیگر دماغی کیفیات
  • ذیابیطس (ٹائپ 1 یا 2)
  • ڈاؤن سنڈروم
  • دل کی کیفیات
  • HIV انفیکشن
  • مامونیت کی کمی (کمزور مدافعتی نظام)
  • ذہنی صحت کی کیفیات
  • بہت زیادہ وزن اور موٹاپا
  • حمل
  • سکل سیل مرض یا تھیلیسیمیا
  • سگریٹ نوشی، حالیہ یا سابقہ
  • کسی عضو یا بلڈ اسٹیم سیل کا ٹرانسپلانٹ
  • دورہ یا دماغی و عروقی مرض جو دماغ میں خون کے بہاؤ پر اثر انداز ہوتا ہے
  • منشیات کے استعمال کے ڈس آرڈرز
  • ٹیوبرکیولوسز (ٹی بی)
معتدل یا شدید حد تک کمزور مدافعتی نظام کے حامل ایسے افراد کے لئے Pfizer-BioNTech یا Moderna (mRNA) ویکسین کی کتنی خوراکوں کی ضرورت ہے جن کی ابتدائی کووڈ-19 ویکسین سیریز mRNA ویکسین تھی؟
  • Pfizer-BioNTech کووڈ-19 ویکسین کے لئے، معتدل یا شدید حد تک کمزور مدافعتی نظام کے حامل افراد کو پہلی خوراک کے 21 دن (3 ہفتے) بعد دوسری خوراک دی جاتی ہے، دوسری خوراک کم از کم 28 دن (4 ہفتے) بعد تیسری خوراک دی جاتی ہے اور اب تیسری خوراک کے کم از کم 3 ماہ بعد چوتھی خوراک (بوسٹر خوراک) کی تجویز دی جاتی ہے۔
  • Moderna کووڈ-19 ویکسین کے لئے، معتدل یا شدید حد تک کمزور مدافعتی نظام کے حامل افراد کو پہلی خوراک کے 28 دن بعد دوسری خوراک دی جاتی ہے، دوسری خوراک کم از کم 28 دن بعد تیسری خوراک دی جاتی ہے اور اب تیسری خوراک کے کم از کم 3 ماہ بعد چوتھی خوراک (بوسٹر خوراک) کی تجویز دی جاتی ہے۔
  • اگر آپ کی عمر 12 سال یا زائد ہے اور چند اقسام کے کمزور مدافعتی نظام کے حامل ہیں تو آپ کسی بھی قبول شدہ یا منظور شدہ کووڈ-19 ویکسین کی پہلی بوسٹر خوراک کے کم از کم 4 ماہ بعد Pfizer-BioNTech کووڈ-19 ویکسین کی دوسری بوسٹر خوراک لگوا سکتے ہیں۔ اگر آپ کی عمر 18 سال یا زائد ہے اور چند اقسام کے کمزور مدافعتی نظام کے حامل ہیں تو آپ کسی بھی قبول شدہ یا منظور شدہ کووڈ-19 ویکسین کی پہلی بوسٹر خوراک کے کم از کم 4 ماہ بعد Moderna کووڈ-19 ویکسین کی دوسری بوسٹر خوراک لگوا سکتے ہیں۔
معتدل یا شدید حد تک کمزور مدافعتی نظام کے حامل جن افراد نے ابتدائی کووڈ-19 ویکسین کے طور پر J&J/Janssen ویکسین لگوائی، ان کے لئے ویکسین کی کتنی خوراکوں کی تجویز دی جاتی ہے؟
  • J&J/Janssen کی خوراک کے کم از کم 28 دن (4 ہفتے) بعد اضافی (دوسری) خوراک دی جاتی ہے۔ اضافی mRNA خوراک کے کم از کم 2 ماہ بعد بوسٹر خوراک (تیسری خوراک) دی جاتی ہے۔
  • ضروری ہے کہ اضافی خوراک mRNA کووڈ-19 ویکسین ہو، اور بوسٹر خوراک کے لئے mRNA کووڈ-19 ویکسین کو ترجیح دی جاتی ہے، کیوں کہ J&J/Janssen ویکسین استعمال کرتے ہوئے تھرومبوسز کے ساتھ تھرومبوساٹوپینیا سنڈروم (TTS) کے اضافی خطرے کے متعلق خدشات موجود ہیں۔ TTS ایک نایاب لیکن سنگین ناموافق اثر ہے، جس کے نتیجے میں خون کے لوتھڑے پیدا ہوتے ہیں یا خون جمنے لگتا ہے۔
  • کم از کم 4 ماہ قبل Johnson & Johnson’s Janssen کووڈ-19 ویکسین کی پرائمری ویکسین اور بوسٹر خوراک لگوانے والے بالغ افراد اب mRNA کووڈ-19 ویکسین استعمال کرتے ہوئے دوسری بوسٹر خوراک لگوا سکتے ہیں۔
معتدل یا شدید حد تک کمزور مدافعتی نظام کے حامل افراد کے لئے بوسٹر کے وقفے کو 5 ماہ سے 3 ماہ تک گھٹانے کی کیا وجہ ہے؟

ممکن ہے کہ معتدل یا شدید حد تک کمزور مدافعتی نظام کے حامل افراد کو پرائمری سیریز کے بعد حفاظتی مامونیت حاصل نہ ہو، خواہ 3 خوراکوں والی mRNA ویکسین کی پرائمری سیریز استعمال کی گئی ہو۔ ان میں وقت کے ساتھ ساتھ حفاظتی مامونیت کم ہونے کا امکان بھی زیادہ ہوتا ہے اور انہیں جلد ہی بوسٹر خوراک کی ضرورت پڑ سکتی ہے۔ کئی مختصر مطالعوں کے ابتدائی ڈیٹا سے ظاہر ہوتا ہے کہ معتدل یا شدید حد تک کمزور مدافعتی نظام کے حامل افراد کو 5 ماہ سے کم مدت میں بوسٹر خوراک لگانے سے اکثر ان کی اینٹی باڈیز دوبارہ بڑھ جاتی ہیں۔ اضافی حفاظتی خدشے کا کوئی ثبوت نہیں تھا۔ فی الحال امریکہ میں کووڈ-19 تیزی سے پھیل رہا ہے اور متاثرہ افراد سے سامنا نہ ہونا مشکل ہے۔ اس لئے شدید پیچیدگیوں کے زائد خطرے میں مبتلا افراد کو جلد از جلد بوسٹر خوراک فراہم کرنا سمجھداری کا تقاضا ہے۔

کیا معتدل یا شدید حد تک کمزور مدافعتی نظام کے حامل افراد کو یہ خوراکیں حاصل کرنے کے لئے ڈاکٹر کے نوٹ/نسخے یا دیگر دستاویز کی ضرورت ہو گی؟

جی نہیں، افراد کسی بھی ویکسین لگانے کے مقام پر خود شناخت کر کے تمام خوراکیں لگوا سکتے ہیں۔ اس سے یہ یقینی بنانے میں مدد ملے گی کہ ان افراد کی رسائی میں کوئی اضافی رکاوٹیں پیش نہ آئیں۔ اگر کمزور مدافعتی نظام کے حامل افراد اپنی مخصوص طبی کیفیت کے متعلق سوالات کرنا چاہیں تو وہ اپنے طبی معالج سے اس متعلق بات کر سکتے ہیں کہ ان کا اضافی خوراک لگوانا مناسب ہے یا نہیں۔